جامعہ سیدہ خدیجة الکبریٰ پکی شاہ مردان برائے خواتین

جامعہ سیدہ خدیجة الکبریٰ پکی شاہ مردان برائے خواتین جامعہ سیدہ خدیجة الکبریٰ پکی شاہ مردان برائے خواتین

ایک خاتون کی تعلیم و تربیت کرنے سے ہم پورے خاندان کی اصلاح کر سکتے ہیںنوجوانوں کے ساتھ ساتھ مستقبل کے لیے بہترین مائیں تیار کرنے کے لیے اور آدھی سے زیادہ آبادی کی اصلاح کا کام شروع کرنے کے لیے علامہ سید افتخار حسین النقوی النجفی نے اس عظیم الشان مرکز کا قیام عمل مینں لایا۔خواتین کی یہ اسلامی یونیورسٹی اس وقت وہ لا ثانی مادر علمی ہے کہ جس نے پشاور سے کراچی تک کی 300 سے زائدطالبات علم دین حاصل کر رہی ہیںجب کہ طالبات کو ادارہ کی طرف سے تمام بنیادی سہولیات(کھانا پینا، میڈیکل، رہائش، کتابیں اور تعلیمی وظائف) فری مہیا کیے جاتے ہیں اس جدید اسلامی یونیورسٹی نے خواتین کے لیے دینی تعلیم کے ساتھ ساتھ انگریزی زبان اور کمپیوٹر کورسز کی بھی سہولت موجود ہے جب کہ اس جامعہ کی کار کردگی کے ضمن میں آج تک اس کے طفیل:
 ہزاروں طالبات علم دین حاصل کر چکی ہیں۔
سینکڑوں طالبات کامیابی سے درس نظامی مکمل کر چکی ہیں۔
سینکڑوں طالبات اعلیٰ تعلیم کے لیے ایران تشریف لے گئیں۔
سینکڑوں طالبات ایران سے اعلیٰ تعلیم حاصل کر کے واپس آچکی ہیں۔
سینکڑوں سے زائد طالبات پاکستان بھر میں مختلف دینی مدارس میں اعلیٰ سطح پر تدریسی و انتظامی فرائض سر انجام دے رہی ہیں۔ 
ہزاروں طالبات 3 ماہ کے شارٹ کورسز میں حصہ لے چکی ہیں۔
با قاعدگی سے ابتدائی دینی تعلیم و تربیت اور کردار سازی کا شارٹ کورس منعقد ہو رہا ہے۔
  با قاعدگی سے پاکستان لیول کا فنکشن”جشن مسرت“ ہو رہا ہے۔
سیکنڑوں طالبات ضلع میانوالی میں تبلیغی امور سر انجام دیتی رہی ہیں۔
سو مقامات پر ہر سال با قاعدگی سے تبلیغی عمل جاری رہتا ہے بذریعہ طالبات۔
ہزاروں طالبات نے کامیابی سے 1 سالہ مبلغہ کورس مکمل کیا ہے۔
سینکڑوں خواہران نے 2 سالہ کورس ”فاضلہ“ کامیابی سے مکمل کیا ہے جو کہ ایم اے عربی اسلامیات کے برابر ہے۔
جامعہ کی طالبات اور معلمات ہر سال ماہ شعبان کے آخری دس دن، ایام محرم، ماہ رمضان میں تبلیغات کے لیے مختلف شہروں، بستیوں میں تشریف لے جاتی ہیں ان تبلیغاتی دورہ جات سے ہزاروں خواتین اب تک استفادہ کر چکی ہیں۔
تبلیغات کا یہ عمل بلوچستان سے گلگت، بلستستان چاروں صوبوں بشمول آزاد کشمیر تک متفرق اہم ایام میں جاری رہتا ہے۔
پاکستان کی عظیم الشان اسلامی یونیورسٹی برائے خواتین میں مزید طالبات داخلے کی خواہشمند ہیں لیکن رہائشی ہاسٹل کی کمی کی وجہ سے یہ کام نہیں ہو رہا۔
.یہ عظیم الشان تعلیمی و تربیتی ادارہ ضلع میانوالی اور پاکستان بھر کی عوام مستفید ہو رہی ہے علم کا یہ منبع روشن و درخشاںہے

    

Leave a comment

Make sure you enter all the required information, indicated by an asterisk (*). HTML code is not allowed.